41

راس الخیمہ(فیاض حسین سٹی ایکسپریس نیوز ) اماراتی ریاست راس الخیمہ میں ایک افسوس ناک واقعہ پیش آیا ہے جس میں 19 ماہ کی بچی رہائشی فلیٹ کی کھڑکی سے نیچے کو جا گری۔ تاہم وہ سیدھا زمین پر گِرنے کی بجائے نیچے کھڑی ایک ٹویوٹا کار سیلون کی پچھلی سکرین پر گِری

راس الخیمہ(فیاض حسین سٹی ایکسپریس نیوز ) اماراتی ریاست راس الخیمہ میں ایک افسوس ناک واقعہ پیش آیا ہے جس میں 19 ماہ کی بچی رہائشی فلیٹ کی کھڑکی سے نیچے کو جا گری۔ تاہم وہ سیدھا زمین پر گِرنے کی بجائے نیچے کھڑی ایک ٹویوٹا کار سیلون کی پچھلی سکرین پر گِری جس کی وجہ سے وہ فوری طور پر مرنے سے تو بچ گئی تاہم اُس کی حالت تشویش ناک بتائی جا رہی ہے۔
بچے کا والدین کا تعلق مصر سے بتایا جاتا ہے۔ ڈیڑھ سالہ بچی کی والدہ نے بتایا کہ وہ راس الخیمہ کی ایک بلند منزلہ رہائشی عمارت کی 10 ویں منزل پر بنے فلیٹ میں مقیم ہیں۔ وقوعہ کے روز رات سوا گیارہ بجے کے قریب وہ اپنے چھ سالہ بیٹے کے اگلے دِن سکول جانے کے لیے بیگ تیار کر رہی تھی۔ اچانک اُس کی نظر بچی پر پڑی جو کمرے کی کھڑکی کے ساتھ لگے صوفے کے اُوپر چڑھ گئی۔
جب اُس نے دیکھا کہ بچی کھڑکی سے گرنے والی ہے تووہ فوراً گھبرا کر اُس کی جانب لپکی۔ لیکن جب تک وہ اُس تک پہنچتی، بچی کھڑکی سے نیچے کی جانب جا گِری۔ بچی کی ماں فوراً گراؤنڈ فلور کی جانب دوڑی۔ اُسے یہ دیکھ کر کچھ تسلّی ہوئی کہ بچی کی سانسیں چل رہی تھیں، کیونکہ وہ زمین پر گرنے سے بچ گئی تھی۔

تاہم اُس کی حالت پھر بھی تشویشناک تھی۔ بچی کو پہلے عبید اللہ اسپتال لے جایا گیا اور پھر سقر ہسپتال منتقل کیا گیا۔ جہاں اُس کے پیٹ کا آپریشن کیا گیا تاکہ اُسکے جسم کے اندرونی حصّوں میں لگنے والی چوٹوں سے رِسنے والا خون بہنے سے روکا جا سکے۔ بچی کے والد نے بتایا کہ اُس نے دو ہفتے قبل اُس وقت صوفہ خریدا تھا جب اُس کی ماں اُس کے پاس چند روز قیام کی خاطر آئی تھی۔ یہ صوفہ کھڑکی کے آگے رکھا گیا تھا۔ جس کے باعث یہ افسوس ناک واقعہ پیش آیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں